کس کے جلوہ کی جھلک ہے یہ اُجالا کیا ہے

0
594
Kis-ke-Jalwa-Ki-Jhalak-Hai-Ye-Ujala-Kiya-Hai
کس کے جلوہ کی جھلک ہے یہ اُجالا کیا ہے

کس کے جلوہ کی جھلک ہے یہ اُجالا کیا ہے
ہر طرف دیدہ حیرت زدہ تکتا کیا ہے

مانگ من مانتی منہ مانگی مرادیں لے گا
نہ یہاں’’ نا‘‘ ہے نہ منگتا سے یہ کہنا کیا ہے

ہم ہیں انکے وہ ہیں تیرے تو ہوئے ہم تیرے
اس سے بڑھ کرتیری صحت اور وسیلہ کیا ہے

ان کی امت میں بنایا انہیں رحمت بھیجا
یوں نہ فرما کہ تیرا رحم میں دعویٰ کیا ہے

صدقہ پیارے کی حیا کا نہ لے مجھ سے حساب
بخش بے پوچھے لجائے کو لجانا کیا

زاہد ان کامیں گنہگار وہ میرے شافع
اتنی نسبت مجھے کیا کم ہے تو سمجھا کیا ہے

اے رضا جان عنادل تیرے نغموں کے نثار
بلبل باغ مدینہ تیرا کہنا کیا ہے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here