میری الفت مدینے سے یونہی نہیں

0
95
Meri Ulfat Madene Se Yunhi Nahe
میری الفت مدینے سے یونہی نہیں​

میری الفت مدینے سے یونہی نہیں
میرے آقا کا روضہ مدینے میں ہے

میں مدینے کی جانب نہ کیسے کھنچوں
میرا دین اور ایمان مدینے میں ہے

“اور پھر مجھے موت کا کوئی خطرہ نہ ہو
موت کیا زندگی کی بھی پرواہ نہ ہو

کاش سرکار اک بار مجھ سے کہیں
اب تیرا جینا مرنا مدینے میں ہے

“پھول کھلتے ہیں پڑھ پڑھ کے صلے علی
چوم کر کہہ رہی ہے باد صبا

ایسی خوشبو چمن کے گلوں میں کہاں
جیسی خوشبو نبی کے پسینے میں ہے

“اپنے روضے میں زندہ ہے میرا نبی
روضہ جنت ہے شک تو نہ کرنا کبھی

مردے جنت میں ہوتے نہیں دوستو
اور وہ جنت کا ٹکڑا مدینے ہے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here