سیدنا آدم عَلیہ السَّلام – چوبیسواں حصہ

0
123
Syedena-Adam-Alai-Islam - Part 24
مقتل ہابیل

:ہابیل کے قتل کا واقعہ قرآن مجید میں اس طرح مذکور ہے

وَاتْلُ عَلَيْـهِـمْ نَبَاَ ابْنَىْ اٰدَمَ بِالْحَقِّۘ اِذْ قَرَّبَا قُرْبَانًا فَتُقُبِّلَ مِنْ اَحَدِهِمَا وَلَمْ يُتَقَبَّلْ مِنَ الْاٰخَرِۖ قَالَ لَاَقْتُلَنَّكَ ۖ قَالَ اِنَّمَا يَتَقَبَّلُ اللّـٰهُ مِنَ الْمُتَّقِيْنَ. 27

لَئِنْ بَسَطْتَ اِلَىَّ يَدَكَ لِتَقْتُلَنِىْ مَآ اَنَا بِبَاسِطٍ يَّدِىَ اِلَيْكَ لِاَقْتُلَكَ ۖ اِنِّـىٓ اَخَافُ اللّـٰهَ رَبَّ الْعَالَمِيْنَ. 28

اِنِّـىٓ اُرِيْدُ اَنْ تَبُـوٓءَ بِاِثْمِىْ وَاِثْمِكَ فَتَكُـوْنَ مِنْ اَصْحَابِ النَّارِ ۚ وَذٰلِكَ جَزَآءُ الظَّالِمِيْنَ. 29

فَطَوَّعَتْ لَـهٝ نَفْسُهٝ قَتْلَ اَخِيْهِ فَقَتَلَـهٝ فَاَصْبَحَ مِنَ الْخَاسِرِيْنَ. 30

فَـبَعَثَ اللّـٰهُ غُـرَابًا يَّبْحَثُ فِى الْاَرْضِ لِيُـرِيَهٝ كَيْفَ يُوَارِىْ سَوْءَةَ اَخِيْهِ ۚ قَالَ يَا وَيْلَتَـآ اَعَجَزْتُ اَنْ اَكُـوْنَ مِثْلَ هٰذَا الْغُـرَابِ فَاُوَارِىَ سَوْءَةَ اَخِىْ ۖ فَاَصْبَحَ مِنَ النَّادِمِيْنَ. 31

مِنْ اَجْلِ ذٰلِكَۚ كَتَبْنَا عَلٰى بَنِىٓ اِسْرَآئِيْلَ اَنَّهٝ مَنْ قَتَلَ نَفْسًا بِغَيْـرِ نَفْسٍ اَوْ فَسَادٍ فِى الْاَرْضِ فَكَاَنَّمَا قَتَلَ النَّاسَ جَـمِيْعًاۖ وَمَنْ اَحْيَاهَا فَكَاَنَّمَآ اَحْيَا النَّاسَ جَـمِيْعًا ۚ وَلَقَدْ جَآءَتْـهُـمْ رُسُلُـنَا بِالْبَيِّنَاتِ ثُـمَّ اِنَّ كَثِيْـرًا مِّنْـهُـمْ بَعْدَ ذٰلِكَ فِى الْاَرْضِ لَمُسْـرِفُوْنَ. 32

:ترجمہ
سیدنا آدم ؑ نے جبرائیل امین سے سوال کیا کہ میری اولاد کو تو موت کاعلم نہ تھا تو ان تمام باتوں کا علم اسے کیسے ہوا؟ جبرائیل ؑ نے کہا شیطان جو آپ کا ازلی دشمن ہے اس نے قابیل کو یہ باتیں سکھلائیں۔ سیدنا آدم ؑ نے فرمایا کہ میری اولاد اب کس طرح نیکی کی راہنمائی کرے گی ، ہابیل کو تو قابیل نے قتل کر دیا جو کہ فسادی ہے یہ تو فتنہ فساد برپا کرے گا۔ حضرت جبرائیل امین ؑ نے فرمایا کہ اب اللہ تعالیٰ آپ کو ہابیل کی جگہ ایک بیٹاد ے گا جو نیک صالح ہو گاجو خوبصورت ہونے کے ساتھ خوب سیرت بھی ہو گا اور اس کی نسل نیکی کے اشاعت کنندہ ہوں گے، فساد اور فتنے پھیلانے والے اولاد قابیل سے ہوں گے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here